COVID-19 کی معلومات میں کچھ اپڈیٹ کیا گیا ہے۔
تازہ ترین نئی رہنمائی کے لیے براہِ مہربانی gov.uk
Gov.uk
Gov.uk
اپنی زبان میں ترجمہ کریں  
 

حالیہ رہنما اصولوں کی وضاحت۔

آپ کو COVID-19 میں مبتلا ہونے سے روکنے اور آپ کو اور آپ کے آس پاس کے لوگوں کو محفوظ رکھنے میں مدد دینے کے لیے حکومت کے رہنما اصولوں اور عملی صلاح کا خلاصہ۔

رہنما اصولوں اور ضوابط میں تازہ ترین تبدیلیاں

اس وقت COVID-19 کے رہنما اصول ہر وقت تبدیل ہو رہے ہیں چونکہ ہم وائرس کے ساتھ زندگی گزارنے کا طریقہ سیکھ رہے ہیں۔ بالکل تازہ ترین رہنما خطوط کے لیے براہ کرم gov.uk ملاحظہ کریں۔ انگلینڈ میں بہت سے تاکیدی رہنما خطوط کو ہٹا دیا گیا ہے۔ تازہ ترین اپ ڈیٹس یہاں ہیں:

  • اگر آپ کا COVID-19 کا ٹیسٹ مثبت آتا ہے تو حکومت نے ذاتی علیحدگی اختیار کرنے کی قانونی ضرورت کو ہٹا دیا ہے۔ اگرچہ قانونی تقاضے کو ہٹا دیا گیا ہے لیکن پھر بھی مشورہ دیا جاتا ہے کہ گھر میں رہیں اور اگر آپ کو COVID-19 ہے تو ذاتی علیحدگی اختیار کریں۔ آپ کو وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے میں مدد کے لیے دوسرے لوگوں کے ساتھ رابطے سے گریز کرنا چاہیے۔
  • اگر آپ کسی ایسے شخص کے قریبی رابطے میں ہیں جس کا COVID-19 کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے تو آپ کو روزانہ ٹیسٹ کرنے کی ضرورت نہیں ہے اور آپ کو قانونی طور پر ذاتی علیحدگی اختیار کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ پھر بھی اگر آپ کر سکتے ہیں تو ایسا کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے، خاص طور پر اگر آپ بیمار محسوس کر رہے ہوں۔
  • ٹیسٹ اور ٹریس سپورٹ ادائیگی سکیم 24 فروری 2022 کو ختم ہو گئی ہے۔
  • 5 سے 11 سال کی عمر کے کچھ بچوں کو COVID-19 ویکسین کی پہلی اور دوسری خوراک مل سکتی ہے اگر ان کی کوئی ایسی حالت ہے جس کا مطلب ہے کہ انہیں COVID-19 سے شدید بیمار ہونے کا زیادہ خطرہ ہے یا وہ کسی ایسے شخص کے ساتھ رہتے ہیں جس کی مدافعتی نظام کمزور ہے۔
  • یکم اپریل سے عام لوگوں کے لیے مفت ٹیسٹنگ ختم ہو جائے گی۔
  • ر نگہداشت کی ترتیبات میں چہرے کو ڈھانپنے اور چہرے کے نقاب کی اب بھی ضرورت ہے۔ اس میں ہسپتال اور پرائمری یا کمیونٹی کیئر ترتیبات شامل ہیں، جیسے کہ GP سرجریز اور آپ کے ویکسین وصول کرتے وقت۔ یہ نگہداشت گاہوں میں آنے والے ہر فرد کو بھی پہننا چاہیے۔

COVID-19 کیا ہے؟

COVID-19 ایک وائرس ہے۔ یہ 2020 کے اوائل سے UKمیں موجود ہے۔ یہ صفحہ آپ کو اور آپ کے آس پاس کے لوگوں کو باخبر اور محفوظ رکھنے میں مدد دینے کے لیے کلیدی رہنما اصولوں کو مختصراً بیان کرتا ہے۔ آپ حکومت کے آفیشل رہنما اصول مکمل طور پر یہاں پڑھ سکتے ہیں۔

 

 

COVID-19 ایک وائرس ہے جو لوگوں کو بیمار کر سکتا ہے۔ یہ ہر ایک کو مختلف طریقہ سے متاثر کرتا ہے۔ سب سے زیادہ عمر رسیدہ لوگ اور ایسے افراد خطرے میں ہوتے ہیں جنہیں صحت کے دائمی امراض لاحق ہیں۔ زیادہ تر لوگوں کو معمولی بیماری ہوتی ہے، لیکن کچھ دیگر لوگ زیادہ لمبی مدت تک سنگین طور پر بیمار ہو سکتے ہیں اور انہیں کام یا اسکول سے کافی طویل رخصت کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ کچھ لوگوں کو ہسپتال جانے کی ضرورت ہوتی ہے اور کچھ لوگ افسوسناک طور پر فوت ہو سکتے ہیں۔

 

خود کو COVID-19 میں مبتلا ہونے، شدید بیمار ہونے اور اسے دوسروں تک پھیلنے سے روکنے کا بہترین طریقہ مکمل طور پر ویکسین حاصل کرنا ہے۔

 

COVID-19 ان لوگوں کے ساتھ قریبی رابطہ میں آنے سے پھیلتا ہے جو اس وائرس میں مبتلا ہوں۔ جب کوئی سانس لیتا ہے، بولتا ہے، کھانستا ہے یا چھینکتا ہے تو وہ اس وائرس پر مشتمل چھوٹے چھوٹے قطرات خارج کرتا ہے۔ اگر آپ ان قطرات میں سانس لیتے ہیں تو آپ کو COVID-19 ہو سکتا ہے۔ متاثرہ لوگ اسے پھیلا سکتے ہیں خواہ ان میں علامات نہ پائی جاتی ہوں۔

 

COVID-19 کی علامات کیا ہیں؟

اگر آپ کے اندر ان علامات میں سے کوئی بھی علامت پائی جاتی ہے تو ایک مفت PCR ٹیسٹ کروائیں۔ آپ کو گھر پر رہنا چاہیے اور صرف PCR ٹیسٹ کروانے کے لیے ہی گھر سے باہر نکلنا چاہیے۔ مفت PCR ٹیسٹ بک کروائیں یا بذریعہ ڈاک اپنے نام سے ایک ہوم کٹ ڈیلیور کروائیں

بخار

38 ڈگری سیلسیس سے زیادہ درجۂ حرارت ہونا یا آپ کے سینہ یا کمر پر چھونے سے گرم محسوس ہونا۔

نئی، مسلسل کھانسی

آپ کو دن میں ایک یا 3 گھنٹے یا اس سے زیادہ بار کھانسی آتی ہے (اگر آپ کو عام طور پر کھانسی ہوتی ہے تو یہ معمول سے زیادہ خراب ہو سکتی ہے)۔

آپ کی سونگھنے یا چکھنے کی حس کا ختم ہو جانا، یا ان میں تبدیلی آنا

آپ کسی چیز کو سونگھ یا چکھ نہیں سکتے، یا چیزیں سونگھنے یا چکھنے میں مختلف لگتی ہیں۔

ایسی دیگر علامات جن پر نظر رکھنی چاہیے…

COVID-19 کی علامات ہر ایک کے لیے یکساں نہیں ہوتیں اور ہر کوئی اس کا مختلف طریقہ سے تجربہ کرتا ہے۔

جو لوگ COVID-19 میں مبتلا رہے ہیں ان کا دعویٰ ہے کہ ان میں سے کچھ علامات ان میں پائی جاتی تھیں؛ بخار یا سردی لگنا، سانس کم آنا، یا سانس لینے میں دشواری ہونا، عضلات یا جسم میں درد، گلے کی سوزش، دست، سر درد، تھکان، متلی یا قے، بلغم یا ناک بہنا۔

حقیقت

گھر پر رہنا اور ذاتی علیحدگی اختیار کرنا COVID-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کا سب سے مؤثر طریقہ ہے۔

گھر پر COVID-19 کا علاج کرنا

Covid ہر ایک کو مختلف طریقے سے متاثر کرتا ہے۔ COVID-19 کی ویکسین حاصل کرنا یقینی بناتا ہے کہ آپ کو سنگین صورتحال سے دوچار ہونے کا امکان کم ہے۔ COVID-19 کا شکار زیادہ تر لوگ چند ہفتوں میں بہتر محسوس کرتے ہیں۔ گھر پر COVID-19 کی علامات پر قابو پانے کے بارے میں مزید جانکاری حاصل کریں۔ آپ کی بحالی صحت کے دوران اپنا دھیان رکھنے میں اس سے مدد ملے گی اگر آپ:

خوب آرام کریں

بہت زیادہ مائع جات پیئیں (پانی سب سے بہتر ہے)

اگر بیمار محسوس کریں تو پیراسیٹامول یا آئبوپروفین لیں

کھانسی یا گلے کی سوزش میں آرام کے لیے شہد استعمال کرنے کی کوشش کریں

اگر گرمی محسوس کرتے ہیں تو کھڑکی کھول لیں اور باریک کپڑے پہنیں

اگر آپ فکرمند ہیں

اگر آپ اپنے یا اپنے گھرانے کے کسی دیگر فرد کے بارے میں فکرمند ہیں تو فوری طبی توجہ حاصل کریں۔ اگر کوئی ایمرجنسی نہ ہو تو 111.nhs.uk/covid-19 ملاحظہ کریں یا 111 پر کال کریں۔

اگر یہ کوئی طبی ایمرجنسی ہے، اور آپ کو ایمبولنس بلانے کی ضرورت ہے، تو 999 ڈائل کریں۔ آپریٹر سے کہیں کہ آپ کو یا آپ کے گھرانے کے کسی فرد کو COVID-19 ہے یا اس کی علامات پائی جاتی ہیں۔

NHS 111 online
Thank you! Your message has been received.

اس موسم سرما میں خود کو کس طرح محفوظ رکھیں اور صحت مند رہیں

آپ درج ذیل کے ذریعہ خود کو اور دوسروں کو محفوظ رکھ سکتے ہیں:

ہوں پر جانے سے پہلے ایک لیٹرل فلو ٹیسٹس کروانا

پ میں علامات موجود ہوں تو ذاتی علیحدگی اختیار کرنا

اپنا فلو کا ٹیکا لگوانا

ی سے اپنے ہاتھ دھونا اور ہینڈ سینیٹائزر استعمال کرنا

چہرے کا نقاب پہننا

کھلی جگہوں پر ملنا;● کھڑکیاں اور دروازے کھولنا

COVID-19 کے طویل مدتی اثرات

19 کے شکار زیادہ تر لوگ کچھ دنوں یا ہفتوں میں بہتر محسوس کرنے لگتے ہیں۔ کچھ لوگوں کے لیے، COVID-19 ایسی علامات کا سبب بن سکتا ہے جو انفیکشن کے ختم ہونے کے بعد ہفتوں یا مہینوں برقرار رہتی ہیں۔ اسے کبھی کبھی ‘پوسٹCOVID-19 سنڈروم’ یا ‘طویل مدتی Covid‘ کہا جاتا ہے، عام طویل مدتی COVID کی علامات میں شامل ہیں:

  • انتہائی تھکان
  • سانس میں کمی
  • سینے میں درد یا جکڑن
  • حافظہ اور ارتکاز توجہ سے متعلق مسائل (‘برین فوگ’)
  • سونے میں دشواری (بے خوابی)
  • دل کا تیز دھڑکنا
  • سر چکرانا
  • سنسناہٹ
  • جوڑوں کا درد
  • افسردگی اور الجھن
  • کانوں کا بجنا
  • کان درد
  • متلی
  • بھوک نہ لگنا
  • سرخ چھوٹے دانے

مدد کب طلب کریں

اگر آپ COVID-19 ہونے کے 4 ہفتے یا اس سے زیادہ مدت کے بعد علامات کے بارے میں فکرمند ہیں تو آپ کو چاہیے کہ اپنے جی پی (GP) سے رابطہ کریں۔ مزید معلومات کے لیے ‘آپ کی COVID-19 کی بحالی صحت’ دیکھیں۔

 

رہنما اصولوں کے بارے میں کثرت سے پوچھے جانے والے سوالات (FAQs)

ہم نے یہاں COVID-19 کے رہنما اصولوں کے بارے میں کثرت سے پوچھے جانے والے کچھ سوالات جمع کیے ہیں۔ اگر آپ کو اپنا سوال یہاں نظر نہیں آتا ہے تو، ہم سے رابطہ کریں۔

سوال

مجھے COVID-19 سے متعلق تازہ ترین معلومات کہاں سے مل سکتی ہیں؟

آپ UK کی حکومت کے ویب پیج پر جا سکتے یا مزید طبی صلاح کے لیے NHS کی ویب سائٹ ملاحظہ کر سکتے ہیں

19 سے سنگین بیماری کا خطرہ سب سے زیادہ کسے ہے؟

60 سال سے زیادہ عمر کے لوگ، اور وہ لوگ جو بنیادی طبی مسائل میں مبتلا ہیں ان کا سنگین بیماری میں مبتلا ہونے کا خطرہ زیادہ ہے۔

تاہم، کوئی بھی شخص COVID-19 کی وجہ سے بیمار ہو سکتا ہے اور شدید بیماری میں مبتلا ہو سکتا ہے یا کسی بھی عمر میں مر سکتا ہے۔

کیا COVID-19 کے طویل مدتی اثرات ہیں؟

کچھ ایسے لوگ جنہیں COVID-19 ہو چکا ہے، خواہ وہ ہسپتال گئے ہوں یا نہ گئے ہوں، وہ مسلسل علامات کا تجربہ کرتے ہیں۔ اسے طویل مدتی کووڈ (Long Covid) کے نام سے جانا جاتا ہے۔

ویرینٹ کیا ہے؟

تمام وائرسیز وقت کے ساتھ بدل جاتے ہیں اور ایک عام بات ہے۔ وہ وائرس جو COVID-19 کا سبب بنتا ہے، تمام وائرسیز کی طرح کئی بار بدل چکا ہے اور ویرینٹس کے طور پر قابل لحاظ تبدیلیاں معلوم ہوئی ہیں۔ کچھ ویرینٹس اس وائرس کی سابقہ اسٹرینس (شکلوں) کو پیچھے چھوڑ سکتی ہیں اور کمیونٹی میں پھیل سکتی ہیں۔ ہر وہ نئی ویرینٹ جو گردش کرتی ہے اسے ایک نام دیا جاتا ہے۔

Omicron ویرینٹ کیا ہے؟

اومیکرون نامی ایک ویرینٹ ہے جو یو کے میں پھیل رہا ہے ۔ یہ ویرینٹ پوری دنیا میں بہت سنجیدگی سے لیا جا رہا ہے کیوں کہ یہ زیادہ آسانی سے پھیلتا ہے اور COVID-19 کے دو ویکسین اس سے بچاؤ کے لیے کافی نہیں ہیں۔ ہر ایک کو مکمل تحفظ حاصل کرنے کے لیے ویکسینیشن اور بوسٹر شاٹ دونوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ اب تک Omicron کے خلاف سب سے بہتر تحفظ COVID-19 کے ٹیکے اور موجودہ رہنما اصولوں پر عمل کرنا ہے۔

Omicron ویرینٹ کیا ہے؟

اومیکرون نامی ایک ویرینٹ ہے جو یو کے میں پھیل رہا ہے ۔ یہ ویرینٹ پوری دنیا میں بہت سنجیدگی سے لیا جا رہا ہے کیوں کہ یہ زیادہ آسانی سے پھیلتا ہے اور COVID-19 کے دو ویکسین اس سے بچاؤ کے لیے کافی نہیں ہیں۔ ہر ایک کو مکمل تحفظ حاصل کرنے کے لیے ویکسینیشن اور بوسٹر شاٹ دونوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ اب تک Omicron کے خلاف سب سے بہتر تحفظ COVID-19 کے ٹیکے اور موجودہ رہنما اصولوں پر عمل کرنا ہے۔

اگر مجھے کوویڈ ہے تو کیا میں اب بھی دودھ پلا سکتی ہوں؟

فی الحال اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ COVID-19 وائرس ماں کے دودھ کے ذریعے منتقل ہو سکتا ہے۔ تاہم، COVID-19 انفیکشن ایک بچے میں اسی طرح منتقل ہو سکتا ہے جس طرح کسی کے قریبی رابطے میں آنے سے ہو سکتا ہے۔ چہرہ ڈھانپنا ترسیل مرض کو کم کرنے کا ایک اچھا طریقہ ہے

 

کیا COVID-19 وائرس اب کم شدت کا ہو گیا ہے؟

دیگر ویریئنٹ کے مقابلے میں Omicron ویریئنٹ میں کم لوگوں کو ہسپتال میں علاج کی ضرورت پڑ رہی ہے۔ لیکن اگرچہ اومیکرون ہلکی نوعیت کا ہے، یہ تیزی سے پھیلتا ہے جس کا مطلب ہے کہ بہت زیادہ لوگ COVID-19 میں مبتلا ہو رہے ہیں۔

یہ بات جاننے کا بھی کوئی طریقہ نہیں ہے کہ کس کو کم شدت کا ہو گا اور کس کو نہیں ہو گا، البتہ UK ہیلتھ سکیورٹی ایجنسی (UKHSA) کے تازہ ترین اعداد و شمار (29 دسمبر 2021) کے مطابق تصدیق شدہ Omicron انفیکشن میں مبتلا اسپتال میں داخل ہونے والے افراد میں سے 74% افراد نے ویکسین کی تین خوراکیں حاصل نہیں کی تھیں۔